Daily Taqat

چینی صدرشنگھائی ایکسپو میں پاکستانی پویلین کا دورہ کریں گئے ،مسعود خالد

بیجنگ : چین میں پاکستان کے سفیر مسعود خالد نے کہا ہے کہ پوری امید ہے کہ وزیراعظم کا دورہ چین بہت مفیدہوگا اور ہم دونوں ممالک کے درمیان قائم دوستی کے عمل کو مزید آگئے لے کر چلیں گئے ،صدر شی جن پنگ شنگھائی ایکسپو کے دوران پاکستانی پویلین کا دورہ کریں گئے ،پاکستان اس وقت بہت مشکل دور سے گزر رہا ہے ہمیں معاشی چیلنجز درپیش ہیں، خطے کی صورتحال بھی افغانستان کی وجہ سے نازک ہے اوروہاں بھارت کی پالیسی بھی سب کے سامنے ہے ہمیں اپنی معیشت اور دفا ع کو مضبوط بنانا ہے اس عمل میں ہمیں چین کا تعاون حاصل ہے ، سی پیک منصوبوں کے نتیجے میں اس وقت تقریبا 22منصوبے مکمل مراحل میں ،چین کے ساتھ تعلیم ،تجارت،معیشت،دفاع،سیکورٹی ،سائنس وٹیکنالوجی ،زراعت سمیت دیگر شعبوں میں وسیع تعاون ہے۔

بیجنگ میں چینی اور پاکستانی میڈیا کو دیئے گئے انٹرویو میں مسعود خالد نے کہاکہ پاکستان اور چین کے تعلقات کی بہت طویل اور سنہری تاریخ ہے اگر دونوں ممالک کے تعلقات کا جائزہ لیا جائے تو یہ صاف نظرآئے گا کہ مختلف مشکلات کے باوجود ،خطے کے تعلقات اور دونوں ممالک کی اندرونی تبدیلیوں کے باوجود پاکستان اور چین کے تعلقات مضبو ط سے مضبو ط تر ہوتے گئے ہیں اس میں کوئی شک نہیں ہے کہ دونوں ممالک کے تعلقات کا گراف اوپر جارہا ہے اور وہ کبھی نیچے نہیں گیا ۔چین کے ساتھ اب ہمارا،تعلیم ،تجارت،معیشت،دفاع،سیکورٹی ،سائنس وٹیکنالوجی ،زراعت سمیت دیگر شعبوں میں اتنا وسیع تعاون ہے اور ہم اشتراک کے ساتھ مختلف منصوبوں پرکام کررہے ہیں۔

انھوں نے کہاکہ چین پاکستان اقتصادی راہدری کا سلسلہ شروع ہونے کے بعد اس تعاون میں ایک نئی وسعت آئی ہے اور مختلف منصوبوں پر عمل ہوا ہے اور نئے منصوبوں پر بات ہورہی ہے جیسے جیسے ہم آگئے بڑھ رہے ہیں مختلف نئے منصوبوں سے پاکستان کی معاشی ترقی کو بڑھانے میں بہت مدد ملے گی ۔پاکستان ایک زرعی ملک ہے ابھی بھی دیکھا جائے تو پاکستان اپنی زراعت سے وہ فائدہ نہیں اٹھا سکا جو اٹھایا جاسکتا تھا آخر وہ کیا چیز ہے جسے پورا کرکے معیشت کو بہتر بنایا جاسکتا ہے اس پر کام کررہے ہیں اور جدید طریقوں سے زراعت سے فائدہ اٹھانے کی کوشش کی جارہی ہے ۔

انھوں نے کہاکہ چین میں 25ہزار پاکستانی تعلیم چین میں زیر تعلیم ہیں اور وہ چین پاکستان دوستی کے سفیر ہیں کیونکہ وہ چینی زبان کو سیکھ رہے ہیں یہاں کی ثقافت کو پڑھ رہے ہیں یہ طلبا مستقبل میں پاک چین دوستی اور عوام سے عوام کے درمیان رابطوں میں کلیدی کردار ادا کریں گئے ۔ انھوں نے کہاکہ وزیراعظم عمران خان کا چین کا پہلا سرکاری دورہ ہے جو بہت اہمیت کا حامل ہے۔وزیراعظم2نومبر کو سرکاری دورے پر بیجنگ پہنچیں گئے جہاں وہ چینی صدر شی جن پنگ اور وزیراعظم لی کیاچیانگ سمیت دیگر رہمناں سے ملاقاتیں کریں گئے اس کے علاوہ وزیراعظم چین کی اعلی کمپنیوں کے سربراہوں اور دیگر بزنس کمیونٹی سے ملاقاتیں کریں گئے ۔چین کے ساتھ پاکستان کے بہت قریبی اور گہرے تعلقات ہیں وزیراعظم کی چینی قیادت سے ملاقاتوں میں دوطرفہ تعلقات کا تفصیلی جائزہ لیا جائے گا اور نئے راستوں پر تعاون بھی تلاش کیا جائے گا۔وزیراعظم عمران خان غربت کے خاتمے ،کرپشن ،زراعت ،صنعتی تعاون اور ترقی پر زیادہ توجہ مرکوز کررہے ہیں ان چیزوں پر چینی حکام کے ساتھ بات چیت ہوگی ۔امید ہے کہ ہم ان شعبوں میں چین کے ساتھ کچھ معاہدے بھی کرپائیں گے ۔انھوں نے کہاکہ وزیراعظم کے دورہ چین کے نتیجے میں پاکستان اور چین کافی معاہدوں اور ایم اویوز پر دستخط کریں گئے اس کے علاوہ وزیراعظم شنگھائی جائیں گئے جہاں وہ پہلی امپورٹ ایکسپو میں شرکت کریں گئے ۔

پاکستان کو ایک اعزازی ملک کی حیثیت حاصل ہے جس کو چینی حکومت نے دعوت دی ہے اور اس سلسلے میں تیاریاں جاری ہیں اورشنگھائی میں پاکستان پویلین بھی قائم کیا جارہا ہے جس میں پاکستان کی مرکزی مصنوعات کی نمائش ہوگی اورملک میں ترقی کے عمل کو اجاگر کیا جائے گا جس میں سائنس و ٹیکنالوجی ،آئی ٹی دیگر شعبوں میں پاکستان کی کامیابیوں اور حکومتی ترجیحات کا نقشہ پیش کیا جائے گا۔امید ہے چینی صدر شی جن پنگ بھی ہمارے پویلین کا دورہ کریں گئے ۔مسعود خالد نے مزید کہاکہ وزیراعظم کی شنگھائی میں سرمایہ کاروں اور بزنس مینوں سے ملاقاتیں ہونگیں اس کے علاوہ پاکستان ٹریڈ اینڈ انوسمنٹ فورم کا بھی اہتمام کیا گیا ہے جس میں چینی بزنس کمیونٹی کو دعوت دی گئی ہے ۔پاکستا ن سے بھی 60سے 70بزنس مینوں پر مشتمل ایک وفد ساتھ آرہا ہے جو کانفرنس میں شرکت کرے گی یہ کانفرنس چینی بزنس کمیونٹی کے ساتھ مستقبل میں تعاون کی راہوں کے حوالے سے ایک بہت اچھا پلیٹ فارم فراہم کرے گی ۔انھوں نے کہاکہ ایکسپو کا پلیٹ فارم بہت اچھا ہے جس میں پاکستانی کمپنیاں اور بزنس مین اپنی مصنوعات کومتعارف کرائیں گئے اور دیکھیں گے کہ ہم کس طرح چینی کمپنیوں کے اشتراک سے اس اقتصادی اور معاشی تعاون کو بڑھانے میں کیا کردار ادا کرسکتے ہیں ۔شنگھائی ایکسپو کا ایک اور بہت اہم پہلو یہ ہے کہ اس میں امریکہ ،یورپ اور دیگر ممالک سے بڑی تعداد میں غیر ملکی کمپنیاں شریک ہورہی ہیں پاکستانی بزنس کمیونٹی کو بہت اچھا موقع میسر آئے گا کہ وہ نہ صرف چینی بلکہ دنیا کی دیگر بڑی کمپنیوں اور بزنس مینوں کے ساتھ بھی اپنی مصنوعات شیئر کرسکیں گئے ۔

انکا کہنا تھاکہ پاکستان کے پاس بڑا اچھا موقع ہے وزیراعظم پاکستان اپنی تمام تقاریر میں حکومتی ترجیحات اور معاشی امور کو اجاگر کریں گئے ۔انھوں نے مزید کہاکہ پاکستان میں وزیراعظم عمران خان کے دورے سے بہت سی توقعات وابستہ ہیں ۔پاکستان اس وقت بہت مشکل دور سے گزر رہا ہے ہمیں معاشی چیلنجز ہیں اور خطے کی صورتحال بھی افغانستان کی وجہ سے نازک ہے وہاں بھارت کی پالیسی بھی سب کے سامنے ہے ہمیں اپنے آپ کو مضبو ط سے مضبوط تر بنانا ہے ہم نے اپنے دفا ع کو مضبوط بنانا ہے اور اس عمل میں ہمیں چین کا تعاون حاصل ہے چین ہمار اہمیشہ بہت اچھا اور قابل اعتماد دوست رہا ہے اور ابھی بھی ہماری مددکرہا ہے سی پیک منصوبوں کے نتیجے میں اس وقت تقریبا 22منصوبے مکمل مراحل میں ہیں جیسے جیسے ہم آگئے چلیں گے مزید منصوبے لگیں گئے اور سرمایہ کاری میں مزید اضافہ ہوگا اور پاکستان کی معاشی ترقی کا عمل تیز ہوگا۔انھوں نے کہاکہ اس وقت 60سے 65ہزار ملازمتیں مقامی سطح پر پیدا ہوئی ہیں اور گزشتہ سال ہماری جی ڈی پی بھی اچھی رہی ہے یہ ساری چیزیں صرف اسی صورت میں ہوتی ہیں جب آپ کے ہاں معاشی ترقی کا عمل تیز سے تیز تر ہواور وہ اسی صورت میں ہوسکتا ہے جب آپ کے ہاں سرمایہ کاری آئے گی اور تجارت میں اضافہ ہوگا ان سب چیزوں کیلئے حکومت پاکستان کوشاں ہے اور ہمیں چین کی مدد بھی حاصل ہے ہمیں پوری امید ہے کہ وزیراعظم کا دورہ اس سلسلے میں بہت مفید ثابت ہوگا اور ہم اس دوستی کے عمل کو مزید آگئے لے کر چلیں گئے ۔


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

Translate »