فرائض سے غفلت برتنےوالےافسران واہلکارکی نیب میں کوئی جگہ نہیں، چیئرمین نیب

اسلام آباد :  قومی احتساب بیورو(نیب) کے چیئرمین جسٹس(ر) جاوید اقبال نے نیب کے تمام ریجنل بیوروز کے ڈائریکٹر جنرلز سے 11اکتوبر 2017کے بعد بدعنوانی سے متعلق عوام کی طرف سے ملنے والی تمام شکایات پر اب تک قانون کے مطابق کارروائی کی رپورٹ کے علاوہ نیب کے تمام ریجنل بیوروز سے کہا ہے کہ انہوں نے نیب کے تمام ریجنل بیوروز کو ملنے والی عوام کی شکایات سے متعلق متعلقہ تمام شکایت کنندگان کو ان کی شکایت کے متعلق تحریری طور پر آگاہ کیا یا نہیں؟اگر واضح احکامات کے باوجود متعلقہ شکایت کنندگان کو قانون کے مطابق آگاہ نہیں کیا تو ذمہ داروں کا تعین کر کے ان کے خلاف قانون کے مطابق کیا کارروائی عمل میں لائی گئی، اس سے بھی آگاہ کیا جائے کیونکہ قانون شکن اور فرائض سے غفلت برتنے والے افسران و اہلکاروں کی نیب میں کوئی جگہ نہیں۔ چیئرمین نیب نے کہا کہ انہوں نے نیب کے دروازے عوام کےلئے کھول دیئے ہیں اور وہ نہ صرف خود ہر ماہ کی آخری جمعرات کوعوام کی بدعنوانی سے متعلق شکایات سنتے ہیں بلکہ نیب کے تمام ریجنل بیوروز کے ڈائریکٹر جنرلز کو بھی ہدایت کی تھی کہ وہ اپنے علاقائی دفاتر میں ہر ماہ کی آخری جمعرات کو عوام کی شکایات سنیں کیونکہ وہ نہیں چاہتے کہ عوام دور دراز سے اپنی جائز شکایات کے ازالہ کے لئے لمباسفر کرتے ہوئے ملک کے کونہ کونہ سے اسلام آئیں اور ان کو پریشانی کے علاوہ ان کے وسائل کا بھی ضیاع ہو، اس لئے چیئرمین نیب نے نیب ہیڈکوارٹرز کے علاوہ نیب کے تمام ڈی جیز کو اپنے علاقائی دفاتر میں ہر ماہ کی آخری جمعرات کو عوام کی بدعنوانی سے متعلق شکایات 2بجے سے 4بجے تک شکایات سننے کی ہدایت کے علاوہ تمام شکایت کنندگان کی عزت نفس کا خیال رکھنے کا حکم دیا تھا۔ چیئرمین نیب کے احکامات کی روشنی میں (آج) جمعرات 22جنوری 2018جو کہ جنوری کے مہینے کی آخری جمعرات کو نیب کے تمام ریجنل بیوروز میں نیب کے ڈائریکٹر جنرلز2بجے سے 4بجے تک عوام کی بدعنوانی سے متعلق شکایات سنیں گے۔ چیئرمین نیب حسب معمول نیب ہیڈکوارٹرز میں خود عوام کی شکایات 2بجے سے 4بجے تک سنیں گے۔ چیئرمین نیب نے تمام ریجنل بیووز کے ڈائریکٹر جنرلز کو ہدایت کی ہے کہ جو شکایات ان کے دائرہ اختیار میں آتی ہوں گی ان پر قانون کے مطابق کارروائی عمل میں لائی جائے جبکہ جو شکایات ان کے دائرہ اختیار میں نہیں آتی ہوں گی ان کو مزید کارروائی کےلئے نیب ہیڈکوارٹرز اسلام آباد بھجوائی جائیں اور تمام شکایت کنندگان کو ان کی شکایات کے موصول ہونے کے متعلق تحریری طور پر نہ صرف آگاہ کیا جائے بلکہ ان کی شکایات پر قانون کے مطابق کاروائی عمل میں لائی جائے اس سلسلہ میں کوئی کوتاہی برداشت نہیں کی جائے گی۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.