Daily Taqat

احسن اقبال پرحملہ، جے آئی ٹی نے تحقیقات کا آغاز کر دیا ،8مشتبہ افراد گرفتار

لاہور: مشترکہ تحقیقاتی ٹیم نے وزیرداخلہ احسن اقبال پر حملے کے واقعے کی تحقیقات کا آغاز کردیا جب کہ پولیس نے مختلف کارروائیوں میں 8 مشتبہ ملزمان کو گرفتار کرلیا۔ذرائع  کے مطابق وزیرداخلہ پر حملے سے متعلق واقعے کی تحقیقات کے لیے تشکیل دی گئی جوائنٹ  انوسٹی گیشن ٹیم (جے آئی ٹی)نے واقعے کی باقاعدہ تحقیقات شروع کردی ہیں، جے آئی ٹی کے ارکان نے نارروال کے علاقے میں جائے وقوعہ کا دورہ کیا اور عینی شاہدین کے بیانات ریکارڈ کیے جب کہ احسن اقبال کی سیکیورٹی پر مامور اہلکاروں کے بیانات بھی لیے اور ملزم کے ساتھ آنے والے شخص کی نقل و حرکت جاننے کی بھی کوشش کی جا رہی ہے۔دوسری جانب جے آئی ٹی بننے کے بعد پولیس مزید متحرک ہوگئی اور پنجاب کے مختلف علاقوں میں کارروائیاں کرتے ہوئے 8 مشتبہ افراد کو حراست میں لے لیا، زیر حراست ملزمان کا تعلق مذہبی جماعت سے بتایا جارہا ہے اور انہیں تھانہ سٹی ، صدر ، کوٹ نیناں ، نور کوٹ اور شاہ غریب میں تفتیش کے لئے رکھا گیا ہے۔دوسری جانب شکرگڑھ سے مذہبی جماعت کے مقامی رہنما علامہ قاسم کا کہنا ہے کہ پولیس نے بلاجواز ہمارے درجن کے قریب کارکنان کو گرفتار کیا جو قابل مذمت ہے۔احسن اقبال پرقاتلانہ حملے کی تحقیقات کے لیے پنجاب حکومت نے 5 رکنی جے آئی ٹی (جوائنٹ انوسٹی گیشن) تشکیل دی تھی، جے آئی ٹی کے سربراہ ڈی آئی جی انویسٹی گیشن وقاص نذیرہیں جب کہ ممبران میں آئی ایس آئی کے نمائندے بھی شامل ہیں۔یاد رہے کہ احسن اقبال پر قاتلانہ حملے کی تحقیقات کیلئے پنجاب حکومت نے 5 رکنی جوائنٹ انوسٹی گیشن ٹیم تشکیل دی ہے جس کے سربراہ ایڈیشنل آئی جی سی ٹی ڈی رائے طاہر ہیں۔ جے آئی ٹی میں ایڈیشنل آئی جی پنجاب پولیس، آر پی او اور حساس اداروں کے نمائندے بھی شامل ہیں۔احسن اقبال پر حملے کا مقدمہ نارووال تھانہ غریب شاہ میں ملزم عابد کیخلاف درج کیا گیا تھا۔ مقدمے میں اقدام قتل، دہشتگردی اور ناجائز اسلحہ رکھنے کی دفعات شامل کی گئی ہیں۔ آر پی او نے ناقص سیکیورٹی انتظامات پر ایس ایچ او تھانہ شاہ غریب کو معطل کر دیا ہے۔ڈی پی او نارووال کے مطابق ملزم عابد نے پندرہ گز کے فاصلے سے دیسی ساختہ تیس بور کے پستول سے گولی چلائی۔ وزیر داخلہ احسن اقبال پر حملہ کرنے والا ملزم عابد حسین شکر گڑھ کے گاں ویرم کا رہائشی ہے اور وہ پرچون کی دکان پر کام کرتا ہے۔ ملزم عابد حسین دبئی بھی جا چکا ہے۔


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

Translate »