Daily Taqat

غزہ پر اسرائیلی حملے کاخطرہ، حماس نے عسکری کیمپ خالی کرالیے

غزہ : اسلامی تحریک مزاحمت حماس کی جانب سے غزہ کی پٹی میں گزشتہ روز نفیر عام کا اعلان کرتے ہوئے حساس مقامات پر ہنگامی نافذ کردی ہے۔ حماس کے ایک ذمہ دار رکن کا اسرائیل کی طرف سے غزہ میں کسی بھی وحشیانہ جارحیت کا خطرہ موجود ہے اور اس خطرے کے پیش نظر غزہ میں القسام بریگیڈ کے تمام عسکری کیمپ بھی خالی کرالیے گئے ہیں۔ذرائع  کے مطابق حماس کے ایک رکن نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ گذشتہ اتوار کو اسرائیلی فوج کی غیرمعمولی مشقوں کے تناظر میں جماعت نے اپنے کارکنان کو الرٹ کرتے ہوئے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ اسرائیلی فوج کسی بھی وقت جارحیت کا مظاہرہ کرسکتی ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ حماس اسرائیل کی طرف سے جنگی مشقوں کو سنجیدگی سے دیکھتی ہے اور احتیاطی تدابیر اور حفاظتی اقدامات کےلئے جماعت کے عسکری ونگ کے مراکز کو خالی کرنے کا حکم دے چکی ہے۔ جماعت نے تمام عسکری کمانڈروں کو ہدایت کی ہے کہ وہ اپنے ٹھکانے تبدیل کرلیں اور موبائل فون استعمال نہ کریں۔ حماس کی اعلی کمان کی طرف سے ہدایات ملنے کے بعد القسام بریگیڈ نے اپنے سیکیورٹی مراکز خالی کردیے ہیں تاکہ اسرائیلی طیاروں کی طرف سے کسی قسم کی جارحیت کا سامنا کرنے سے بچا جاسکے۔اگرچہ اسرائیلی فوج کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ غزہ کے قریب حالیہ ایام میں مشقیں معمول کا حصہ ہیں مگر حماس ذرائع کا کہنا ہے کہ غزہ کے اطراف میں فوجی مشقوں کا مقصد غزہ پر چڑھائی کی تیاری ہوسکتا ہے۔ اسرائیلی فوج کی نقل وحرکت سے کئی قسم کے شکوک وشبہات پیدا ہوئے ہیں۔خیال رہے کہ دو روز قبل اسرائیلی آرمی چیف جنرل گیڈی آئزنکوٹ نے خبردار کیا تھا کہ غزہ کی پٹی میں رواں سال خطرناک جنگ ہوسکتی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ غزہ کی پٹی میں جاری بحران ایک نئی جنگ کاموجب بن سکتے ہیں۔


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

Translate »