Latest news

بیرون ملک ثالثی اور اندرونی انتشار (1)

آج کل میں کچھ زیادہ ہی پریشان اور ہیجانی کیفیت سے دو چار ہوں ۔ہماری ریاست اور حکمرانوں نے کن ترجیحات کا تعین کیا ہے جس کے نتیجہ میں افرا تفریحی انتشار اور معاشی بد خالی بڑھتی ہوئی دیکھائی دیتی ہے پاکستانی سماجی ، سیاسی اور معاشی منظر نامے پر مایوسی اور قنوطیت آ گئی ہے پارلیمنٹ اور دیگر ادارے اپنے اصل کردار کے بارے میں غیر متعلق ہو چکے ہیں چہرے بے سکون اور نگاہیں سوال کرتی ہیں کہ ہم نے کیا اندرونی مسائل پر قابو پا لیا ہے جس سے سیاسی اور معاشی استحکام حاصل ہو چکا ہے اب ہم بیرون ملک ثالثی کا کردار نبھانے جا رہے ہیں جس کے بارے میں عمران خان نے کہا ہے کہ وہ ایران اور سعودی عرب کے درمیان تناﺅ کی کیفیات ختم کرنے کےلئے سہولت کار کا کردار ادا کرنا چاہتے ہیں ۔ ثالثی کے بارے میں کسی نے نہیں کہا بلکہ وہ اپنے تہیں کرنا چاہتے ہیں۔ مجھے اپنی باتوں سے کوئی حیرانگی نہیں ہوتی ہے کیونکہ پاپولسٹ لیڈر کی خواہش ہوتی ہے کہ اس کی شخصیت کو بین الاقوامی سطح پر پذیرائی حاصل ہوئی جس کےلئے وہ مقامی میڈیا اینکرز ، تجزیہ نگاروں اور دانشوروں کی مدد سے اپنے تشخص کو ابھارنا چاہتا ہے ویسے بھی جو لیڈر داخلی وسائل کو حل کرنے میں ناکام ہو جاتا ہے تو وہ بین الاقوامی میڈیا کی خبروں میں آکر اپنی حیثیت کو نمایاں اور اپنی ناکامیوں کو چھپانا چاہتا ہے ۔ ہم ہر روز میڈیا اور اخبارات میں روایتی بیانات تجزیے اور باتیں سن کر اکتا چکے ہیں ، حکومت کے حامی دانشوروں کے بقول اپنے کرپشن کے مقدمات کے منطقی انجام اور سزا سے بچنے کےلئے حکومت کے خلاف تحریک چلانا چاہتی ہے جس سے مسئلہ کشمیر کے حوالے سے پاکستان کی کاوشوں کو نقصان پہنچ سکتا ہے ، دوسرے دھرنوں اور احتجاجی تحریکوں سے ملک معاشی عدم استحکام سے دو چار ہو سکتا ہے ، ان سوالوں کا جواب تلاش کرنے کےلئے میں نے پاکستان پیپلز پارٹی پنجاب کے صدر قمر زمان کائرہ سے رابطہ کیا۔ جو روایتی سیاستدانوں سے الگ ایک منفرد نظریاتی اور دانشور اور سماجی علوں کا ماہرہونے کی وجہ سے مسائل کے حل کے بارے میں سینٹفک اپروچ رکھتے ہیں اور اپنی بات کو دلیل تاریخی حقائق کے معروض میں بیان کرتے ہیں وہ جذباتیت کی بجائے منطق سے بات کو آگے بڑھاتے ہیں جس کا تعلق زمینی حقائق سے ہوتا ہے وہ محض ہوائی باتیں کرنے کے قائل نہیں ہیں ۔ ان کے تجزےے ہمیشہ متوازن اور ترقی(جاری ہے)


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.