اہم خبرِیں

بابا قائماں

ایک زمانہ تھا کہ اگر کسی پر جنسی حراسانی کا الزام لگتا تھا تو وہ شخص شہر میں کسی کو منہ دکھانے کے قابل نہیں رہتا تھا۔ سب سے چھپتا پھرتا اورمعاشرے سے کٹ کے رہ جاتا اور لوگوں کی نفرت کا نشانہ بنتا۔
لیکن یہ سنتھیا رچی بی بی نے ایسا ہی ملک کے چند بڑوں پر الزام کیا لگایاکہ یہ ملزمان جہاں کہیں سے گزرتے ہیں لوگ دوڑ دوڑ کر انہیں حسرت سے دیکھتے ہیں اور کہتے ہیں، یہ رتبہ بلند ملا جس کو مل گیا۔
ہمارے شہر کا ”بابا قائماں” بھی کل سوٹی پکڑے گلی میں ہر ایک سے کہہ رہا تھا:
”بیٹا سنتھیارچی بی بی سے کہہ دو میرا نام بھی لے لے محلے میں میری ٹہور بھی بن جائے گی”۔


Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.