بھارت میں سیکڑوں مساجد مندروں میں تبدیل

لاہور: بھارتی وزیراعظم نے5اگست کو تاریخی بابری مسجد کی جگہ رام مندر کی دوبارہ تعمیرکا سنگ بنیاد رکھ دیا ہے۔

بابری مسجد کی جگہ رام مندرکی تعمیرکا تنازع تو کئی سال تک بھارتی عدالتوں میں چلتا رہا ہے تاہم1947کی تقسیم کے بعد سے بھارت میں سیکڑوں مساجد ایسی ہیں جن کو مندروں اور گوردواروں میں تبدیل کردیا گیا، بھارتی شہروں امرتسر اورہریانہ میں ایسی16تاریخی مساجد ہیں جن کو مسلم کمیونٹی کے احتجاج کے باوجود گوردواروں میں تبدیل کردیا گیا۔

بھارتی شہرحیدر آباد کے سیکریٹریٹ کی عمارت کوگرائے جانے کے دوران دو تاریخی مساجد کو بھی شہید کردیا گیا ہے، آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ کے ترجمان خالدسیف اللہ رحمانی نے بتایا کہ جامع مسجد ہاشمی اور مسجددفاترمعتمدی کی شہادت پوری امت مسلمہ کیلئے تکلیف کا باعث ہے، انھوں نے کہاکہ مسجد کسی متبادل جگہ پرنہیں بلکہ اسی جگہ تعمیرکی جائیں جہاں وہ پہلے موجود تھیں۔

پاکستانی میڈیا کی تحقیق کے دوران یہ بات سامنے آئی ہے کہ1947کی تقسیم کے بعد بھارت میں سیکڑوں تاریخی مساجد کو گوردواروں اورمندروں میں تبدیل کیا جاچکا ہے۔علامہ زبیر احمد ظہیر نے کہا کہ مساجد کی شہادت پر پاکستانیوں کی تشویش سے بھارت کو آگاہ کیا جائے۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.