انڈیا میں انو کھا اور غیر اخلاقی رواج

پٹنہ : بھارت میں ایک شخص نے اپنی بیوی کی شادی اس کے عاشق سے کرادی ۔ شادی کرانے والے شخص نے اپنے دونوں بچے بھی نئے پریمی جوڑے کے حوالے کردیے اور انہیں نیک خواہشات کے ساتھ رخصت کیا ہے۔
بھارتی ریاست بہار کے ضلع ویشالی کے علاقے حاجی پور کے گاﺅں اچدیہہ میں انوکھا واقعہ پیش آیا جہاں ایک شخص کی بیوی نے اس سے اپنے دوسرے مرد کے بارے میں افیئر کا اظہار کیا تو اس شخص نے اپنی بیوی کی اس کے عاشق کے ساتھ شادی کرادی۔ یہ شادی باضابطہ طور پر رجسٹرڈ بھی کرائی گئی ہے تاکہ اس جوڑے کو مستقبل میں کسی قسم کی پریشانی کا سامنا نہ کرنا پڑے۔
ارون کمار نامی شخص کی 10 سال قبل مدھو کماری سے شادی ہوئی اور دونوں کے گھر 2 بچے بھی پیدا ہوئے۔ ارون کمار روزگار کے سلسلے میں گھر سے باہر رہتا تھا ، اس کی غیر موجودگی میں اس کی بیوی نے ایک نوجوان سے پیار کی پینگیں بڑھالیں۔ اتوار کے روز گاﺅں والوں نے مدھو کماری کو اپنے عاشق شرون کمار کے ساتھ رنگے ہاتھوں پکڑ لیا جس کے بعد ارون کمار کو واقعے کی اطلاع دی گئی ۔

اس واقعے کے بعد گاﺅں میں پنچایت ہوئی جس میں مدھو کماری نے درخواست کی کہ وہ اپنے عاشق کے ساتھ رہنا چاہتی ہے اس لیے انہیں شوہر اور بیوی کا درجہ دیا جائے۔پنچایت میں موجود بے وفائی کا نشانہ بننے والا شوہر ارون کمار بھی موجود تھا جس نے اہلِ دیہہ کو یقین دہانی کرائی کہ وہ اپنی بے وفا بیوی کی خواہش ضرور پوری کرے گا۔

پیر کے روز گاﺅں والوں کی موجودگی میں ارون کمار نے اپنی بیوی مدھو کماری اور اس کے عاشق کی مقامی مندر میں شادی کرادی ، ’لیکن کہانی یہیں ختم نہیں ہوئی‘۔ ارون کمار نے نئے نویلے جوڑے کو کسی بھی قسم کی قانونی پیچیدگی سے بچانے کیلئے منگل کے روز عدالت سے رجوع کیا اور یہ شادی باضابطہ طور پر رجسٹرڈ کرادی۔ ’کہانی ابھی بھی ختم نہیں ہوئی‘۔ ارون کمار نے ایک قدم اور آگے بڑھاتے ہوئے اپنے دونوں بچے بھی نو بیاہتا جوڑے کے حوالے کردیے اور ان کیلئے نیک خواہشات کا اظہار کیا۔ ارون کمار کا کہنا ہے کہ جب اس کی بیوی اپنے عاشق کے ساتھ رہنا چاہتی ہے تو وہ ان کے پیار میں کیدو کا کردار ادا نہیں کرنا چاہتا اس لیے اس نے خود ہی دونوں کی شادی کرادی۔
واضح رہے کہ رواں ماہ ریاست بہار کے ضلع بھاگلپور میں بھی ایسا ہی انوکھا واقعہ پیش آیا تھا جب ایک شخص نے اپنی بیوی کی شادی اپنے چھوٹے بھائی سے کروادی تھی۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.