Latest news

سکول ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ کاپیف سکولوں کے ساتھ سوتیلوں جیسا سلوک کیوں ؟

گورنمنٹ ٹیچر کو 50 ہزار تنخواہ، پیف فی کلاس ٹیچر و سہولیات  کے لئے 16500 روپے, گورنمنٹ سکولوں کو کم حاضری  پر 1 ہزار جرمانہ نہیں, پیف سکولوں کو کم حاضری پر 1 لاکھ تک جرمانہ پورا سال, گورنمنٹ سکولوں کو ہر ماہ کی پہلی کو تنخواہ، پیف سکولز کو ہر ماہ کے آخر میں تنخواہ،  گورنمنٹ سکولز کی ہر کلاس کا غیر جانبدار ادارے سے ٹیسٹ نہیں ہوتا نہ 75 فیصد رزلٹ کی شرط، پیف سکولز کی ہر کلاس کا ٹیسٹ غیر جانبدار ادارے سے ٹیسٹ اور 75 فیصد رزلٹ کی شرط،  گورنمنٹ سکول کے کسی ٹیچر کی نوکری ختم نہیں کی جا سکتی، پیف سکول کو کوئی تحفظ نہیں جب مرضی آئے کینسل، گورنمنٹ سکول کی بھاری تنخواہوں  کے باوجود ہر سال تنخواہ میں اضافہ, پیف سکولز کی تنخواہ  میں 3،3 سال کوئی اضافہ نہیں گورنمنٹ سکول کو رجسٹریشن کی کوئی پریشانی نہیں، پیف سکولزکو مستقل رجسٹریشن نہ دے کر ہر سال پیسے بٹورے جاتے ہیں گورنمنٹ سکول کی مڈل ہائی کی طالبات کو 1000 ماہانہ وظیفہ زیرو مراعات گورنمنٹ سکولز کو مانیٹرنگ رپورٹ چیلنج کا اختیار اور کوئی جرمانوں کا چارٹ نہیں، پیف سکولز کا مانیٹر جو مرضی  آئے رپورٹ لکھ دے پارٹنر کو  چیلنج کا اختیار نہیں  اور 38 چیزوں پر 20،20 فیصد فنڈ کی جرمانہ میں کٹوتی لہذٰا  پیف سکولز کے ساتھ سوتیلوں والا سلوک  ختم کر کے گورنمنٹ سکول کے برابر مراعات  دی جائیں نہیں تو معاملہ چیف جسٹس کے پاس جائے گا ۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.