Latest news

انصاف اور شہد کی مکھیاں

جوڈیشنل اکیڈمی میں محکمہ عدل و انصاف میں بھرتی ہونےوالے نئے جوڈیشل افسران کا تربیتی کورس جاری تھا۔ایک دن ایک لیکچر کےلئے ایک سابق جج صاحب کو بلایا گیا۔

عدل و انصاف پر انہوں نے بڑا تفصیلی لیکچر دیا اور یہ بھی کہا کہ عدل و انصاف سے ہی قوموںکا عروج و زوال منسلک ہے۔

لہٰذا عدالتی لوگوںکو اپنے فرائض کی سرانجام دہی میں انصاف کا دامن کسی صورت میں نہیں چھوڑنا چاہے اور کسی بھی دباﺅ میں نہیں آنا چاہیے۔ پاکستان کی عدالتی تاریخ کی تفصیل بتاتے ہوئے انہوں نے بے شمار مثالیں دیں جہاں انصاف ہوا اور ایسے مرحلے بھی بتائے جہاں نظریہ ضرورت کے تحت فیصلے کئے گئے۔ ایک زیر تربیت آفیسر نے پوچھا نظریہ ضرورت کے تحت فیصلے کرنے والوں کو تو کوئی نقصان تو نہ ہوا؟ اس پر جج صاحب نے جواب دیا ‘ہاں!اور کچھ تو نہیں ہوا بس ایک جنازے پر شہد کی مکھیوں نے حملہ کر دیا تھا اور لوگ جنازہ چھوڑ کر بھاگ گئے تھے۔


اپنی راہےکااظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.